پاکستان ڈائری - 05

پاکستان ڈائری میں اس بار ہم پراجیکٹ ریچ کی اونر اور ڈیزائنر مدیحہ صائل سے ملاقات کروائیں گے

پاکستان ڈائری - 05

پاکستان ڈائری - 05

ہار سنگھار زیبائش و آرائش عورت میں فطری طور پر شامل ہے۔زیورات ایسی چیز ہیں جیسے اگر خواتین کی کمزوری کہا جائے تو بلکل درست ہوگا۔مختلف تقریبات کی حساب سے خواتین کی خواہش ہوتی کہ وہ سب خوبصورت اور منفرد نظر آئیں ۔تاہم سونا اور چاندی کے دام اتنے بڑھ گئے ہیں کہ متوسط طبقے میں اتنی استطاعت نہیں کہ بار بار سونا خرید سکیں ۔اس لئے پاکستان میں خواتین کی بڑی تعداد اب آرٹفیشل اور گولڈ پلیٹڈ جیولری خریدتی ہے۔

پراجیکٹ ریچ project rich پاکستان کا لوکل جیولری برینڈ ہے جوکہ پاکستانی روایتی جیولری کو پروموٹ کرتا ہے ۔اس کے ساتھ مغلیہ جیولری، کندن کی جیولری، ترکش جیولری اور جدید فیشن پر مبنی جیولری  بھی ہر سال متعارف کروائی جاتی ہے۔بہت کم وقت میں پراجیکٹ ریچ پاکستانی عوام میں مقبول ہوگیا کیونکہ یہ کم قیمت ہے اور خوبصورتی میں اپنی مثال نہیں رکھتا ۔پاکستان ڈائری میں اس بار ہم پراجیکٹ ریچ کی اونر اور ڈیزائنر مدیحہ صائل سے ملاقات کروائیں گے۔مدیحہ صائل معروف ادیب اشفاق احمد کے خانوادے سے تعلق رکھتی ہیں۔ان کے اباواجداد 1947 میں فیروزپور سے ہجرت کرکے پاکستان آئے۔ مدیحہ لاہور میں پیدا ہوئیں ۔کانونٹ جیسز اور میری ، لاہور گرامر سکول سے تعلیم حاصل کی ۔اسکے بعد پنجاب یونیورسٹی سے ڈاکٹر آف فارمیسی کی تعلیم مکمل کی۔شوقیہ شاعری بھی کرتی ہیں۔

وہ کہتی ہیں الحمداللہ ہماری فیملی میں خواتین کو بہت پروموٹ کیا جاتا کہ وہ تعلیم حاصل کریں کیرئیر بنائیں ۔مدیحہ نے بتایاکہ انہوں نے نامور ادیب اور دانشور اشفاق احمد سے بہت سیکھا وہ کہتی ہیں اشفاق احمد میرے دادا کے بھائی ہیں۔میرے نانا میاں زکاءالرحمان قائد اعظم کے رفقاء میں تھے اور عملی سیاست کا حصہ تھے۔میری نانی ماں سوشل ورک کرتی ہیں۔میری والدہ اور والد دونوں فارمسٹ ہیں۔ میں اور بھائی بہت چھوٹے تھے جب ہمارے والد انتقال کرگئے۔ میری والدہ نے تعلیم بھی مکمل کی کام کا آغاز کیا اور ہماری دیکھ بھال بھی ساتھ ساتھ کی۔ان کی محنت اور ہمت سے بہت کچھ سیکھا۔وہ بہت سے لوگوں کے لیے انسپریشن ہیں۔

مدیحہ صائل نے ٹی آر ٹی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ میں فارمیسی کی تعلیم مکمل کی کافی عرصہ اس ہی شعبہ میں کام کیا لیکن لگتا تھا کہ کچھ کمی ہے۔2010 میں پراجیکٹ ریچ کی بنیاد رکھی۔15 سال کی عمر سے میں امی کی بوتیک میں کپڑوں پر کڑھائیاں ڈیزائن کرتی تھی اس لئے ڈیزائنگ کا شوق تو بچپن سے تھا۔فارمیسی کے شعبے میں کام کرتے ہوئے مجھے لگتا تھا یہ بہت ڈرائی فیلڈ ہے ۔پراجیکٹ ریچ کی بنیاد رکھی اور 2011 سے میں جیولری بنا رہی ہو۔

مدیحہ صائل کہتی ہیں پراجیکٹ ریچ میں ہم صرف میڈ ان پاکستان چیزیں بیچتے ہیں۔ہمارا مقصد یہ ہے کہ پاکستانی مصنوعات کو فروغ دیا جائے ۔ہمارے کرافٹ مین بہت خوبصورتی سے کام کرتے ہیں ۔میری کوشش ہوتی ہے ہم روایتی جیولری کو جدید خطوط پر ڈیزائن کرکے صارف کے لئے پیش کریں ۔نئی نسل کو جیولری بہت پسند ہے وہ چاہتے ہیں ہر سال نئی جیولری خریدیں اس لئے میں گولڈ پلیٹڈ جیولری بناتی ہوں تاکہ کم قیمت میں ہر فیشن کے مطابق چیزیں خریدی جاسکیں ۔

پراجیکٹ ریچ کسٹمایزڈ جیولری بھی بناتا ہے جس میں لوگوں کے نام والے ٹاپس، بروچ ، نیکلس ،لاکٹ، ٹائی پنز اور کف لنکس ہوتے ہیں۔اسکے ساتھ پراجیکٹ ریچ وہ برانڈ ہے جس نے 2013 میں یوم آزادی پر آزادی لائن سب سے پہلے متعارف کروائی اور لوگوں کی بڑی تعداد نے دل دل پاکستان ،جھنڈے اور پاکستان کے نقشے والی جیولری اور دیگر اشیاء پسند کی۔وہ کہتی ہیں کسٹمائزڈ جیولری میں چار سے پانچ ڈیزائن ڈرا کرتی ہوں اسکے بعد کلائنٹ کی پسند کے بعد فائنل پیس تیار ہوتا ہے۔

میڈیا اور شوبز کے ستارے بھی میڈیا کے مدیحہ صائل کے ڈیزائن پہنا پسند کرتے ہیں۔ریما خان ، صنم جنگ ، انوشے اشرف ،صنم بلوچ اعجاز اسلم ، احسن خان دیگر پراجیکٹ ریچ کے ریگولر کلائنٹ ہیں ۔

وہ کہتی ہیں میں برائیڈل جیولری بھی بناتی ہوں اس کے ساتھ کیلی گرافی بھی بہت ڈیمانڈ میں ہے۔جو بھی صارف ہم سے رابطہ کرنے چاہیں وہ پراجیکٹ ریچ project rich کے فیس بک انسٹا گرام اور ویٹ ایپ سے رابطہ کر سکتے ہیں کیش ان ڈلیوری پر ہم جیولری صارفین تک پہنچاتے ہیں۔اب انشاء اللہ فروری میں ہمارا پہلا اسٹوڈیو ایم ایم عالم روڈ لاہور میں اوپن ہورہا ہے اور ویب سائٹ بھی لانچ ہورہی ہے۔

مدیحہ صائل کہتی ہیں گزشتہ برس فنکی جیولری بہت ان تھی لوگ سادہ کپڑوں کے ساتھ بڑے ہار اور بڑی انگوٹھیاں پہن رہے تھے ۔اس سال فیشن میں ٹرینڈ تبدیل ہورہے ہیں اور نازک جیولری زیادہ پسند کی جارہی ہے۔لوگ تجربات کرنے کو پسند کررہے ہیں ہم وائٹ گولڈ روڈئم گولڈ پلیٹڈ جیولری بھی بنارہے ہیں۔وہ کہتی ہیں میری کوشش ہے کہ پاکستانی کلچرل کو بھرپور طریقے سےپروموٹ کریں ۔



متعللقہ خبریں